ہوم / زبان و ادب (page 5)

زبان و ادب

ادب پہلا قرینہ ہے محبت کے قرینوں میں

Poem………by Khola Ahmad

لَا إِلَهَ إِلَّا أَنْتَ سُبْحَانَكَ إِنِّي كُنْتُ مِنَ الظَّالِمِينَ Dim and distant maybe in nonage I’ve learnt what does this mean لَا إِلَهَ إِلَّا أَنْتَ سُبْحَانَكَ إِنِّي كُنْتُ مِنَ الظَّالِمِينَ Lots of things come and go Nothing stayed as time did intervene لَا إِلَهَ إِلَّا أَنْتَ سُبْحَانَكَ إِنِّي كُنْتُ مِنَ

مزید پڑھیے

نظم۔۔۔۔۔۔۔ارشاد عرشی ملک

  داناؤں میں کام ہی کیا ہے،کم فہموں ،نادانوں کا دُنیا سے کیا لینا دینا،ہم جیسے دیوانوں کا ساری عُمر گزاری ہم نے، تنہائی کی بانہوں میں تب جا کر کچھ لذت پائی ،نیم شبی کی آہوں میں دل نے رستہ دیکھ لیا اب ،صحراؤں ،ویرانوں کا دُنیا سے کیا

مزید پڑھیے

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔نصیر ترابی

دیا سا دل کے خرابے میں جل رہا ہے میاں دئیے کی لو میں کوئی عکس چل رہا ہے میاں یہ روح رقص چراغاں ہے اپنے حلقے میں یہ جسم سایہ ہے اور سایہ ڈھل رہا ہے میاں یہ آنکھ پردہ ہے اک گردش تحیر کا یہ دل نہیں ہے،

مزید پڑھیے

نظم۔۔۔۔۔۔مدبر آسان قائل۔ جرمنی

بندر کی کھال کوئی فاختہ مجھ سے یہ کہہ گئی ہے کہ جنگل میں کچھ بکریاں رہ گئی ہیں جو ریوڑ میں رہتی نہیں پھر اس کے علاوہ ہیں کچھ بھیڑیے مختلف نسل کے بھیڑیے کف آلود جبڑے کسی کے کوئی لومڑی اور کتے کی جفتی کا حاصل اور کسی

مزید پڑھیے

زاویہ نگاہ۔۔۔۔۔۔از، سعدیہ تسنیم سحر، جرمنی

ادب پارہ کچھ دن پہلے رضا علی عابدی کی کتاب "جرنیلی سڑک "پڑھنے کا اتفاق ہوا ۔جس میں وہ سڑک کنارے سفر کرتا ہوا جب اختتام تک پہنچا اور اس نے ایک بابا جی سے پوچھا کہ کیا یہاں جرنیلی سڑک ختم ہوتی ہے؟ تو باباجی نے جوا ب دیا

مزید پڑھیے

پنجابی زبان کااداس شاعر،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شو کمار بٹالوی

بھارت میں جس پنجابی شاعر نے سب سے زیادہ مقبولیت حاصل کی ، وہ تھے شِو کمار بٹالوی ۔۔۔۔ پنجاب میں تو وہ شاید ساحر، امرتا، فراز سے بھی زیادہ مقبول ہوئے۔ یوں سمجھیں ان کی نظمیں لوک گیت بن گئیں۔ نی اک میری اکھہ کاشنی + دوجےرات دے آنیندرے

مزید پڑھیے

سر تا پاشاعر رسا چغتائی بھی گئے۔۔۔۔۔۔۔اداریہ

کل ایک ایسا شاعر بھی چل بساجس کے لکھے بعضے بعضے اشعار تو پڑھتے ہوئے بھی سانس پھول جائے۔ کراچی کا ایسا مجذوب جس پہ درویش کا لفظ اجنبی نہیں لگتا تھا اور جس کا کلام اور خیال دونوں ہی سلگتے اور لو دیتے ہوئے تھے۔ افسوس یہ کہ جب

مزید پڑھیے

رقص اہل قلم۔۔۔۔۔۔۔۔قطعات عرشی

اہل قلم کا رقص ہے ڈھولک کی تھاپ پر نقصان بے حساب ریاست کا ہو گیا لو قتلِ عام فہم و فراست کا ہو گیا اہلِ قلم کا رقص ہے ڈھولک کی تھاپ پر مُلائیت سے عقد ، سیاست کا ہو گیا (ارشاد عرشی ملک)  

مزید پڑھیے

نئے سال کی پہلی غزل۔۔۔۔۔۔۔۔صابر ظفر

تو دور دیس میں خوش اور میں وطن میں اداس اور اب تو روح بھی رہنے لگی بدن میں اداس بہت ترنگ میں تھا میں کہ دیکھنا ہے تجھے اور اب ھوں میں ، تری دیکھی ہوئی لگن میں اداس نشاط – عشق نے رکھا نہیں وفا کا بھرم میں

مزید پڑھیے

Send this to friend