ہوم / زبان و ادب (page 5)

زبان و ادب

ادب پہلا قرینہ ہے محبت کے قرینوں میں

زاویہ نگاہ۔۔۔۔۔۔از، سعدیہ تسنیم سحر، جرمنی

ادب پارہ کچھ دن پہلے رضا علی عابدی کی کتاب "جرنیلی سڑک "پڑھنے کا اتفاق ہوا ۔جس میں وہ سڑک کنارے سفر کرتا ہوا جب اختتام تک پہنچا اور اس نے ایک بابا جی سے پوچھا کہ کیا یہاں جرنیلی سڑک ختم ہوتی ہے؟ تو باباجی نے جوا ب دیا

مزید پڑھیے

پنجابی زبان کااداس شاعر،۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شو کمار بٹالوی

بھارت میں جس پنجابی شاعر نے سب سے زیادہ مقبولیت حاصل کی ، وہ تھے شِو کمار بٹالوی ۔۔۔۔ پنجاب میں تو وہ شاید ساحر، امرتا، فراز سے بھی زیادہ مقبول ہوئے۔ یوں سمجھیں ان کی نظمیں لوک گیت بن گئیں۔ نی اک میری اکھہ کاشنی + دوجےرات دے آنیندرے

مزید پڑھیے

سر تا پاشاعر رسا چغتائی بھی گئے۔۔۔۔۔۔۔اداریہ

کل ایک ایسا شاعر بھی چل بساجس کے لکھے بعضے بعضے اشعار تو پڑھتے ہوئے بھی سانس پھول جائے۔ کراچی کا ایسا مجذوب جس پہ درویش کا لفظ اجنبی نہیں لگتا تھا اور جس کا کلام اور خیال دونوں ہی سلگتے اور لو دیتے ہوئے تھے۔ افسوس یہ کہ جب

مزید پڑھیے

رقص اہل قلم۔۔۔۔۔۔۔۔قطعات عرشی

اہل قلم کا رقص ہے ڈھولک کی تھاپ پر نقصان بے حساب ریاست کا ہو گیا لو قتلِ عام فہم و فراست کا ہو گیا اہلِ قلم کا رقص ہے ڈھولک کی تھاپ پر مُلائیت سے عقد ، سیاست کا ہو گیا (ارشاد عرشی ملک)  

مزید پڑھیے

نئے سال کی پہلی غزل۔۔۔۔۔۔۔۔صابر ظفر

تو دور دیس میں خوش اور میں وطن میں اداس اور اب تو روح بھی رہنے لگی بدن میں اداس بہت ترنگ میں تھا میں کہ دیکھنا ہے تجھے اور اب ھوں میں ، تری دیکھی ہوئی لگن میں اداس نشاط – عشق نے رکھا نہیں وفا کا بھرم میں

مزید پڑھیے

یہ سب اگر رہے تو ریاست تمام شد۔۔۔غزل، راجہ محمد یوسف

شہر جہاں پناہ میں راحت تمام شد یعنی حیات و موت کی لذت تمام شد ارباب حل و عقد کو کچھ سوجھتا نہیں سیل ہوس میں دانش و حکمت تمام شد بے درد حکمران تو بے فیض آئمہ یہ سب اگر رہے تو ریاست تمام شد منصف الجھ گئے ہیں

مزید پڑھیے

تین اشعار،از قسم نیرنگ خیال۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

تار نظر ملے تو، کہیں اشک ہی پرو لیں بڑی کم شناس آنکھیں،اور قیمتی لڑی ہے کوئی لمحہ جنوں تھا ، جو زمانہ بن گیا ہے کوئی ساعت گریزاں، اب تک وہیں کھڑی ہے تیرا بے نیاز لہجہ، تیری اکھڑی اکھڑی باتیں گرہ دل میں پڑ گئی ہے، یا زبان

مزید پڑھیے

انتخاب فیض۔۔۔۔۔۔از صاحبزادہ مرزا لقمان احمد

غزل شامِ فراق، اب نہ پوچھ، آئی اور آکے ٹل گئی دل تھا کہ پھر بہل گیا، جاں تھی کہ پھر سنبھل گئی بزمِ خیال میں ترے حسن کی شمع جل گئی درد کا چاند بجھ گیا، ہجر کی رات ڈھل گئی جب تجھے یاد کرلیا، صبح مہک مہک اٹھی

مزید پڑھیے

کاش مل کر سوچتے اہل چمن۔۔۔۔۔۔۔چوہدری محمد علی مضطر عارفی

چوہدری محمد علی مضطرؔعارفی کی آخری غزل اس قدر انکار پر انکار سے لگ نہ جاؤ تم کہیں دیوار سے نظریاتی مملکت بننے کے بعد کیسے کیسے بھوت نکلے غار سے ہم بھی گزرے پابجولاں سربکف شام سے اور شام کے بازار سے آرہی ہے باغِ جنت کی مہک کوہِ

مزید پڑھیے

ابھی دو دن میں یہ قصہ مکمل ہونے والا ہے۔۔۔۔۔۔ناصرہ زبیری

تماشا کل جو دیکھا تھا وہی کل ہونے والا ہے ہمارے ساتھ ایسا کیا مسلسل ہونے والا ہے؟ ابھی بس رہ گئ ہیں کھیل کی دو چار ہی قسطیں ابھی دو دن میں یہ قصہ مکمل ہونے والا ہے وہی جس میں تماشائ بھی سارے ہار جاتے ہیں ہمارے شہر

مزید پڑھیے

Send this to friend