ہوم / نیوز/حالات حاضرہ (page 10)

نیوز/حالات حاضرہ

جو دل کو ہے خبر کہیں ملتی نہیں خبر۔۔۔۔۔۔!

جسٹس صدیقی کی جیت قائد اعظم کی ہار ہے۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

کل اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت صدیقی نے زخموں سے چور، نڈھال، آدھا کٹا ہوا اور جگہ جگہ سے خون ٹپکا تا ہوا آزردہ و مغموم ۔۔۔۔۔۔سخت تکلیف میں کراہتا ہوا پاکستان قانونی طور پر آئینی موشگافیاں کرتے ہوئے قائد اعظم محمد علی جناح کے ہاتھوں سے جھپٹ

مزید پڑھیے

پنجابی غزل۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

لیکھاں کیتی، ماڑی کوئی نہیں ویلے،بھاجی چاڑھی کوئی نہیں اچن چیتی، اٹھ کے ٹر پئی۔۔۔! کیتی چنگی ماڑی کوئی نہیں اکھ نے دیوا بال کے رکھیا ہنھیرے کولوں، ہاری کوئی نہیں اوس وی بوہا ڈھویا نہیں سی میں وی کندھ اساری کوئی نہیں دن دا بھار وی پورا چکیا رات

مزید پڑھیے

جج صاحب، رہنے دیجئے یہ پتھر بھاری ہے۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

پنجابی کی ایک مثل ہے کہ، "مجھ دے کے گھوڑی لئی، دودھ پینوں گئے، لد سٹنی پئی” ترجمہ یہ کہ بھینس دے کر گھوڑی لی، دودھ پینے سے بھی گئے اور الٹا روز گھوڑی کی لد صاف کرنی پڑی۔ پہلے تو چند گزارشات اولی الا بصار کے لئے ہیں، جن

مزید پڑھیے

نواز شریف تہذیب بیکری میں……… طاہر ملک

آج کے اخبارات اور سوشل میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا کہ کل میاں نواز شریف نے احتساب عدالت پیشی کے بعد راولپنڈی اسلام آباد کی مشہور بیکری تہذیب کا مطالعاتی دورہ کیا ان کی کھانے پینے کی مختلف اشیاء کا مشاہدہ کیا اور ان کے معیار کی ستائش کی ۔ان

مزید پڑھیے

اس اونٹ کی کروٹ بہت خطرناک ہو گی۔۔۔۔۔۔۔واحد اللہ جاوید

از واحد اللہ جاوید

برادرم طاہر بھٹی اپنے مضمون، "پاکستان میں اونٹ کسی وقت بھی مر سکتا ہے” میں ایک مسیحی ملزم کے ساتھ غیر انسانی، مکروہ اور انتہائی گھٹیا بد سلوکی پر سیخ پاء ہیں اور غصہ ان کی تحریر سے ٹپک رہا ہے۔ اللہ انہیں بھی صبروتحمل اور مجھے بھی برداشت کی

مزید پڑھیے

Colosseum Turns Red ; by Waseem Altaf

Colosseum Turns Red The civilized world realized much earlier that the state has to be neutral, non-discriminatory and non-partisan, unlike a theological state, which is always biased towards those who belong to the state religion. And consequently unfavorable towards the hapless minorities. Our so-called “visionary” leaders never realized that while

مزید پڑھیے

پاکستان میں اونٹ کسی وقت بھی مر سکتا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

زمانہ جاہلیہ کے عرب کا ایک رواج تھا کہ وہ جنگوں میں اپنے مرنے والوں کو رویا نہیں کرتے تھے جب تک کہ بدلہ نے لے لیں۔ ایسی ہی ایک لڑائی کے بعد عمائدین مکہ نے فیصلہ کیا کہ اس جنگ میں مرنے والوں کو کوئی نہیں روئے گا۔۔۔۔۔۔۔یہ قبائل

مزید پڑھیے

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

چشم پر نم کی بات کرتے ہیں ہلکی بارش میں رات کرتے ہیں خواب اپنی جگہ عزیز  ہمیں رتجگے بھی تو ساتھ کرتے ہیں اک تعلق کو سینچنے کے لئے بے تعلق سی بات کرتے ہیں  تھک گئے ہیں بہت تعین سے آئیے۔ حاثات کرتے ہیں  سانس رکنے لگی تکلم

مزید پڑھیے

لڑکیاں۔۔۔۔۔۔۔۔از سعدیہ تسنیم سحر، جرمنی

لڑکیاں کل تم نے کیسا سوال پوچھا کہ کیا تم اب بھی لکھتی ہو ؟اس سوال پر میری طویل خاموشی پر تم تو سمجھی ہو گی کہ لائن کٹ گئی مگر تم کیا جانو کہ اس سوال نےکیا اودھم مچایا بلکہ پا بجولاں رقص کروایا ۔نجانے کون کونسے زخموں کے

مزید پڑھیے

نظم۔۔۔۔۔۔۔۔۔امتہ الباری ناصر

آس رکھتے ہیں تری ہی ذات سے میرے خدا جب بھی ہودرپیش کوئی آزمائش‘ ابتلا گر گئے چوکھٹ پہ تیری ہو گئے ہیں بے قرار ’اے خدا کمزور ہیں ہم اپنے ہاتھوں سے اٹھا‘ صبر‘ کتنا صبر ہم تو ناتواں کمزور ہیں پھٹ گئے ہیں دل اب اطمینان کا مرہم

مزید پڑھیے

Send this to friend