ہوم / حقوق/جدوجہد (page 4)

حقوق/جدوجہد

چلے چلو کہ وہ منزل ابھی نہیں آئی

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔ دل کی حالتوں پہ اب گفتگو اضافی ہے ہو بہ ہو کے قضئیے میں، من و تو اضافی ہے دید کا تقاضا ہے، دل کا دم بخود ہونا رو برو کے لمحوں میں، ہاوء ہو اضافی ہے ان کی دلنوازی پر بات آئے گی ورنہ دل کے آئینے میں

مزید پڑھیے

بس اب کے اتنی تبدیلی ہوئی ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

موجودہ حکومت جب "جمہوریت” کے پیٹ میں تھی تو تبدیلی تبدیلی کا وہ شور پڑنا شروع ہوا جو آج تک تھمنے میں نہیں آتا۔ تبدیلی کا لفظ اس طرح اس نئے حکومتی نظم و نسق سے پیوست ہوا کہ اب تبدیلی کہتے ہی عمران خان اور حواری اور ان کے

مزید پڑھیے

ریاست مدینہ، حقائق کے آئینے میں۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

آج دو ہفتے ہونے کو آئے کہ دور و نزدیک سے پاکستان میں ریاست مدینہ کے ماڈل کے احیاء نو کے چرچے سننے کو مل رہے ہیں۔ ہمیں ذاتی طور پر تو پہلے دن سے ہی واضح تھا کہ یہ نئے ہاتھی کے دکھانے کے دانت ہیں۔ اس کو سنجیدگی

مزید پڑھیے

وارث نہ کر مان وارثاں دا۔۔۔۔۔۔۔اصغر علی بھٹی

  دلیل تو اُس بھیڑئیے کے پاس بھی تھی جو بھیڑکے بچے پر پانی گندہ کرنے کا الزام لگا رہا تھا۔اوردلیل تو نمرود کے پاس بھی تھی جو ابراہیم ؑ کو آگ میں جلانے کا حکم دے رہا تھا ۔ دلیل توفرعون کے پاس بھی تھی جو موسیٰ ؑ پر

مزید پڑھیے

ریاست مدینہ سے گھسیٹ پورے تک۔۔۔۔۔۔چوہدری نعیم احمد باجوہ

’ بابا! کیا یہ ہر عید پر ایک مسجد کوگراتے ہیں۔؟‘‘ اس معصوم سوال نے مجھے ہلا کر رکھ دیا ۔ میں فیصل آباد گھیسٹ پورہ میں ہون والے واقعہ کی خبریں سوشل میڈیا پر دیکھ رہا تھا ۔اسی حوالے سے گھر میں بات ہو رہی تھی کہ ارض پاک

مزید پڑھیے

نئے پاکستان کی پرانی روش۔۔۔۔اداریہ، آئینہ ابصار

عید قربان سے چند دن قبل ہی نیا پاکستان، ایک نئے مسیحا کے ساتھ امیدوں کا ہجوم لے کر طلوع ہوا تھا اور لڑکے بالے ہی کیا کھیلے کھائے بزرگ بھی یک گونہ سر شار تھے کہ شائید اب کچھ نیا ہونے جا رہا ہے۔ ہم جیسے چوٹ کھائے اور

مزید پڑھیے

چودہ اگست اور جاوید چوہدری کا آدھا سچ۔۔۔۔۔۔اصغر علی بھٹی

لندن میں تین مصروف ترین ہفتے گزارنے کے بعد کاسا بلانکا کے ٹرانزٹ ہال میں داخل ہوتے ہوئے کافی سستی سی چھا رہی تھی۔ سوچا اچھا ہے نائیجر کے صحرا میں داخل ہونے سے پہلے کچھ مراکش کے نیم ٹھنڈے ماحول میں سُستا لیا جائے۔سوادھر اُدھر نظر دوڑائی۔ پرسکون گوشہ

مزید پڑھیے

آپ کے مضمون کے ریسپونس میں۔۔۔ کچھ خیالات۔….از نجمہ صدیقی، واشنگٹن

یہ موضوع تو نیا نہیں، نہ ہی خان صاحب کو تجاویز دینے کا شوق، لیکن اس کو نبھانے کا انداز ضرور مختلف ہے۔ طاہر بھٹی کی بیٹی کی لیول جو بھی ہو (وہاں تو لوگ سمجھتے ہیں کہ تمام کا تمام ملک ہی ہائی سکول لیول تک نہیں پہنچتا) ہمارے

مزید پڑھیے

Send this to friend