ہوم / زبان و ادب / غزل ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ رحمان فارس

غزل ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ رحمان فارس

خلقتِ شہر بھلے لاکھ دُھائی دیوے ۔۔
قصرِ شاھی کو دکھائی نہ سُنائی دیوے

عشق وہ ساتویں حِس ھے کہ عطا ھو جس کو
رنگ سُن جاویں اُسے ، خوشبو دکھائی دیوے

ایک تہہ خانہ ھُوں مَیں اور مرا دروازہ ھے تُو
جُز ترے کون مجھے مجھ میں رسائی دیوے

ھم کسی اور کے ھاتھوں سے نہ ھوں گے گھائل
زخم دیوے تو وھی دستِ حنائی دیوے ۔۔۔۔

تُو اگر جھانکے تو مجھ اندھے کنویں میں شاید
کوئی لَو اُبھرے ، کوئی نقش سجھائی دیوے

پتّیاں ھیں ، یہ سلاخیں تو نہیں ھیں فارس
پھول سے کہہ دو کہ خوشبو کو رھائی دیوے

رحمان فارس

مصنف طاہر بھٹی

Check Also

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔رشید ندیم، کینیڈا

غزل ہوا رہے گی مرا نقشِ پا نہیں رہنا مجھے خبر ہے مرے بعد کیا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Send this to friend