ہوم / زبان و ادب / غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔صائمہ شاہ

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔صائمہ شاہ

چہرہ تراش لانے سے پہلے کی بات ہے
آئینہ ٹوٹ جانے سے پہلے کی بات ہے

فصل بہار آنے سے پہلے کی بات ہے
یہ تیرے مسکرانے سے پہلے کی بات ہے

آتی نہ تھی کبھی مرے لفظوں میں روشنی
اپنا لکھا مٹانے سے پہلے کی بات ہے

اک مضمحل سی شام پہ تکیہ کئے رہے
راتوں کے جگمگانے سے پہلے کی بات ہے

آنسو وفور شوق میں ڈھلتے تھے رات بھر
دل کے قرار پانے سے پہلے کی بات ہے

غزل، صائمہ شاہ
پنسل سکیچ۔۔۔۔۔تحدیث رحمت

مصنف admin

Check Also

کنکاں چھڈ،۔۔۔۔۔کپاہ لینے آں)…..پنجابی غزل، ۔۔۔طاہر احمد بھٹی)

(کنکاں چھڈ ، کپاہ لینے آں) تیرے ساہیں، ساہ لینے آں ساہ کیہڑے نے، پھاہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Send this to friend