ہوم / حقوق/جدوجہد / غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔شھزاد قیس

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔شھزاد قیس

ابر کے چاروں طرف ________ باڑ لگا دی جائے،
مفت بارش میں نہانے پہ ______ سزا دی جائے،

سانس لینے کا بھی تاوان ___ کیا جائے وصول،
سبسڈی دھوپ پہ ___ کچھ اور بڑھا دی جائے،

قہقہہ جو بھی لگائے ____اسے بل بھیجیں گے،
پیار سے دیکھنے پہ ____ پرچی تھما دی جائے،

آئینہ دیکھنے پہ __________دگنا کرایہ ھو گا،
بات یہ پہلے ________ مسافر کو بتا دی جائے،

تتلیوں کا جو تعاقب کرے _____ چالان بھرے،
زلف میں پھول سجانے پہ _____سزا دی جائے،

یہ اگر پیشہ ھے تو، اس میں رعایت کیوں ھو
بھیک لینے پہ بھی اب______چنگی لگا دی جائے

حاکم_وقت سے ___ قذاقوں نے سیکھا ھو گا
باج نہ ملتا ھو تو ______ گولی چلا دی جائے

کچی مٹی کی مہک ____ مفت طلب کرتا ھے
قیس کو دشت کی تصویر ___ دکھا دی جائے

شہزاد قیس

مصنف طاہر بھٹی

Check Also

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔رشید ندیم، کینیڈا

غزل ہوا رہے گی مرا نقشِ پا نہیں رہنا مجھے خبر ہے مرے بعد کیا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Send this to friend