ہوم / نیوز/حالات حاضرہ

نیوز/حالات حاضرہ

جو دل کو ہے خبر کہیں ملتی نہیں خبر۔۔۔۔۔۔!

غزل۔۔۔۔۔۔۔ملک نجیب احمد فہیم

ہم سے تو دل کا درد سنبھالا نہیں گیا دل کو بھی شہرِ جاں سے نکالا نہیں گیا اتنے خلوص و پیار سے جاں اس نے مانگ لی ہم سے بھی اس کی بات کو ٹالا نہیں گیا میں تو ملال و غم کا سبب پوچھتا رہا لیکن وہ لب

مزید پڑھیے

غزل۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

غزل۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی خود ہی آن بتاوء جی گیان کا بھید اور بھاوء جی من میں رم جھم اشکوں کی تم بھی بھیگ ہی جاوء جی نین کٹورے جل تھل ہیں برکھا۔ اب تھم جاوء، ری پریت ہے کرپا مالک کی سر آنکھوں پہ بٹھاوء جی دل کی دلی سونی

مزید پڑھیے

تم ہمیں کیا نئی منزل کی بشارت دو گے۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

پاکستان کی صورتحال پہ کچھ لکھنے میں روک یہ ہوتی ہے کہ ، جب جسم ہی سارا جلتا ہو، پھر دامن دل کو بچائیں کیا۔۔۔! لیکن ساتھ ہی کبھی کہیں اقتدار کی راہداریوں سے ایسی مکروہ اور جاہلانہ بات سنائی دیتی ہے کہ اس خاموش اکٹریت کی طرف سے جو

مزید پڑھیے

آئینے پریشاں ہیں، اب نگارخانے میں۔۔۔۔۔۔غزل، ،۔۔صائمہ شاہ

بے کلی سی رہتی ہے دل کے چار خانے میں اتنی دیر کیوں کر دی زندگی میں آنے میں؟ دوریوں نے جسم و جاں لخت لخت کر ڈالے زندگی لگانی ہے ، اب قریب آنے میں مستقل مزاجی سے کیجئے ستم، جاناں آپ بھی مزہ لیجے، میرا دل جلانے میں

مزید پڑھیے

خواب اس آنکھ میں بھریں کیسے۔۔۔۔!غزل۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

خواب اس آنکھ میں بھریں کیسے۔۔۔۔!غزل۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی دیپ کچھ تھے ، مگر جلے ہی نہیں دید کے سلسلے ، چلے ہی نہیں کیسی قوس قزح ہے آنکھوں میں ہم تو اس شوخ سے ملے ہی نہیں آئینے دم بخود تحیر میں۔۔۔! شیشہ رو کے یہ مسئلے ہی نہیں چشم

مزید پڑھیے

، از قلم، ایوب کموکا ، ساڈی فیر چپ جے۔۔۔۔۔۔لیو ٹالسٹائی دے مضمون دا پنجابی ترجمہ

ساڈی تے فر چپ اے جی۔۔۔ خالدقیوم تنولی بھائی دے شکریے نال ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ لیو ٹالسٹائی دا اعتراف۔۔ جنگ توں بعد میں سینٹ پیٹرز برگ واپس آگیا تے ادیباں تے شاعراں دی صحبت وچ اٹھن بیٹھن لگ پیا۔اوہناں نے مینوں اپنے جیہا سمجھ کے قبول کر لیا تے میری خوشامد کرن

مزید پڑھیے

کچھ تمہارے بھی دھیان پڑتی ہے۔۔۔۔؟ طاہر احمد بھٹی

سن 2012 ہو گا، میں اسلام آباد کے لئے گھر سے سامان کار میں ڈال کے نکلا ہی تھا اور ابھی اپنے شھر کے اپنے محلے دارلنصر والی کالج روڈ پہ ہی تھا کہ جدید پریس کے ساتھ پولیس چوکی کے سامنے ایک ٹریفک کے سپاہی نے "بلا اشتعال” یعنی

مزید پڑھیے

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔رشید ندیم، کینیڈا

غزل ہوا رہے گی مرا نقشِ پا نہیں رہنا مجھے خبر ہے مرے بعد کیا نہیں رہنا خمارِ عشق نشے کی طرح اترتا ہے سدا کسی نے یہاں مبتلا نہیں رہنا تجھے خبر بھی ہے شائستہِ بہارِ چمن کسی شجر نے ہمیشہ ہرا نہیں رہنا یہ کس گمان کی اے

مزید پڑھیے

کنکاں چھڈ،۔۔۔۔۔کپاہ لینے آں)…..پنجابی غزل، ۔۔۔طاہر احمد بھٹی)

(کنکاں چھڈ ، کپاہ لینے آں) تیرے ساہیں، ساہ لینے آں ساہ کیہڑے نے، پھاہ لینے آں راتیں کوڑیاں سچیاں کر کے دن دیاں کندھاں ڈھاہ لینے آں بھکھ تے مر گئی، ننگ ای کج لو کنکاں چھڈ،۔۔۔۔۔۔کپاہ لینے آں ایس لئی جھولی خالی رہ گئی اوہ لینے آں،۔۔۔۔۔آہ لینے

مزید پڑھیے

اٹاں والی۔۔۔۔۔۔۔۔۔پنجابی نظم، ۔۔۔۔۔۔حضرت شام

اِٹاں والی۰۰۰۰۰حضرت شام (فالسےدے باغ وچ ہون والی تِن زنانیاں دی لڑائی تے کجھ سطراں) نی چوہڑئے کوہجئے، کالیئے نی کالے کرماں والئے تری جرات کیویں ہوئی نی ساڈھے بھانڈیاں نوں ہتھ لان دی ساڈھے بھانڈے پاک تے صاف نیں ایہہ ساری دنیا جاندی ساڈھے ویر نوں توں للکاریا کیوں

مزید پڑھیے

Send this to friend