Food for thought, by: Marya Irem

A matter between man and Allah, by Waseem Altaf

The inevitable medium, by Marya Irem

Whatsapp Groups……..by Waseem Altaf

Colosseum Turns Red ; by Waseem Altaf

Asma is dead…..long live Asma!….by Adnan Rehmat

From Sir Sayed To Iqbal, by ; Dr. Satyapal Anand

Women Lawer Forum seeking equality, Editorial

Loud Thinking…………Hamza Rao

Poem………by Khola Ahmad

Poem ……by Saira A. Nizami

Joota…….by Waseem Altaf

An Evening covered landscape, by Bushra Mehmood

Recent Posts

غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔صائمہ امینہ شاہ

غزل یہ میری آنکھوں کے جگنوؤں میں جو اک چمک ہے تمہیں نا دے دوں یہ میرے چاروں طرف جو پھیلی ہوئی دھنک ہے، تمہیں نا دے دوں زمانے بھر کی ہے خاک چھانی، تھکن کے صحرا میں پاؤں چھلنی تمہیں نہ پا کر جو دل میں ٹھہری ہوئی کسک

مزید پڑھیے

غزل۔۔۔۔۔۔قابل اجمیری، مراسلہ۔۔۔۔۔از ظفر قابل اجمیری

عشق میں تازکی ہی رہتی ہے وہ نظر ، چھیڑتی ہی رہتی ہے میری راتیں اجڑ گئیں اے دوست اب یہاں روشنی ہی رہتی ہے جانے کیا ہو پلک جھپکنے میں زندگی جاگتی ہی رہتی ہے لاکھ وہ بے نیاز ہو جائے حسن میں دلکشی ہی رہتی ہے زہر بھی

مزید پڑھیے

ریاست مدینہ، حقائق کے آئینے میں۔۔۔۔۔۔۔۔طاہر احمد بھٹی

آج دو ہفتے ہونے کو آئے کہ دور و نزدیک سے پاکستان میں ریاست مدینہ کے ماڈل کے احیاء نو کے چرچے سننے کو مل رہے ہیں۔ ہمیں ذاتی طور پر تو پہلے دن سے ہی واضح تھا کہ یہ نئے ہاتھی کے دکھانے کے دانت ہیں۔ اس کو سنجیدگی

مزید پڑھیے

Send this to friend